تعلیم و صحت

دنیا کی نظریں پاکستان پر، پاکستان میں سنگین بیماری میں اضافہ ہوگیا

ترجمان وزارت صحت کی جانب سے کہا گیا ہے کہ پولیو کا شکار ہونے والی بچی کی معذوری 2 مئی کو رپورٹ ہوئی تھی۔ صرف شمالی وزیرستان کی تحصیل میر علی سے کیسز کی تعداد 6 ہو گئی ہے۔

اس اہم معاملے پر بات کرتے ہوئے وفاقی وزیر صحت عبدالقادر پٹیل نے کہا ہے کہ شمالی وزیرستان میں 2014ء اور 2019ء کی طرز پر دوبارہ پولیو کی وبا پھوٹ گئی ہے۔ ماضی میں بھی اسی علاقے سے پولیو کیسز رپورٹ ہو رہے تھے۔عبدالقادر پٹیل نے کہا کہ حکومت اس وبا کے خاتمے کے لیے جنگی بنیادوں پر کوشش کر رہی ہے۔ خیبر پختونخوا کے جنوبی اضلاع بشمول شمالی وجنوبی وزیرستان، ڈی آئی خان، بنوں، ٹانک اور لکی مروت پولیو وائرس کے لیے حساس قرار دیئے گئے ہیں۔

وفاقی وزیر صحت کا کہنا تھا کہ بنوں سے رواں سال اپریل اور مئی کے دو ماحولیاتی نمونوں سے وائرس کی تصدیق ہوئی ہے۔ والدین سے اپیل ہے اپنے بجوں کو عمر بھر کی معذوری سے بچانے کیلئے پولیو کے قطرے ضرور پلائیں۔

متعلقہ مضامین

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button